Jaag Kashmir online news from Dadyal, Dudyal, Mirpur and Azad Kashmir
Jaag Kashmir online news from Dadyal, Dudyal, Mirpur and Azad Kashmir Sat, 25 Feb 2017

فون پر صرف uc browser میں کھولیں

Use UC Browser to open on mobile.

News from Dadyal, Mirpur and all Azad Kashmirمیرپور ،ڈڈیال ، چکسواری کا ایک ہی بڑا مطالبہ جو !

وقاص چوہدری نے یہ خبر 2016-12-31 کو pm10:06 پرچکسواری کی کیٹیگری میں پوسٹ کی اور ابھی تک اس کو 605 قارئین نے پڑھا ہے۔
 

Jaagkashmir.com urdu news dadyal mirpur azad kashmir

چک سواری(شہزادعظیم/نمائندہ جاگ کشمیر)

مملکتِ خدادادپاکستان وآزادکشمیرکی روشنی اورترقی کے لیے دوبارقربانیاں دینے والے اہلیانِ میرپورکوہی قربانی لگایاجانے لگا،منگلاڈیم کی تعمیراورچندسال قبل اپ ریزنگ سے قبل کیے جانے والے وعدے سبزباغ ثابت ہوئے،بجلی کی مفت فراہمی تودرکنارمہنگے داموں بجلی بھی دستیاب نہیں،موسم گرمامیں حبس اورموسمِ سرمامیں اندھیرے اہلیانِ میرپورکامقدر،14سے سولہ گھنٹے فورس لوڈشیڈنگ سے ہرطبقہ متاثر،اہلیانِ چکسواری میں تشویش کی لہر،واپڈااورحکومتِ آزادکشمیرہوش کے ناخن لے اورمتاثرین منگلاڈیم کواحتجاج پرمجبورنہ کیاجائے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان وآزادکشمیرکوروشن کرنے اوراقتصادی ترقی کے منگلاڈیم کی صورت میں دومرتبہ آبائواجدادکی زمینوں،قبروں اورجائیدادوںکی قربانیاں دینے والے اہلیانِ میرپوربجلی کوترس چکے ہیں۔سردیوں کے اس موسم میں یومیہ14سے سولہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ اہلیانِ میرپورکوحواس باختہ کررہی ہے۔چھ دہائیاں قبل منگلاڈیم کی تعمیراورچندبرس ڈیم کی اپ ریزنگ سے قبل متاثرین سے بہت سے وعدے کیے گئے جوسبز باغ ثابت ہوئے۔بہت سے وعدوں میں سے ایک یہ بھی تھاکہ متاثرین ڈیم کوبجلی مفت فراہم کی جائے مگربجلی کی مفت فراہمی تودرکنارقیمتاًبجلی بھی دستیاب نہیں۔باوثوق ذرائع کے مطابق پاکستان کی نسبت آزادکشمیرمیں بجلی یونٹ مہنگی دی جارہی ہے اورنیلم جہلم سرچارج کے ساتھ ساتھ ماہانہ کرایہ میٹرکی صورت میں بھتہ بھی وصول کیاجارہاہے مگرپھربھی یومیہ14سے سولہ گھنٹے فورس لوڈشیڈنگ کی جاتی ہے جس سے کاروبارِ زندگی مفلوج ہوکررہ گیاہے۔بجلی سے وابستہ کاروبارتوتقریباًبندہونے کے قریب ہوچکے ہیں جبکہ عام شہری بھی اس لوڈشیڈنگ سے ذہنی مریض بنتاجارہاہے۔ستم ظریفی ملاحظہ ہوکہ میرپورکے واحدوزیرحکومت اعلان کرتے ہیں کہ میرپورکے لیے صرف چارگھنٹے لوڈشیڈنگ کاشیڈول منظورکروالیاہے جبکہ حقیقت اس کے بالکل برعکس ہے۔لوڈشیڈنگ کی وجہ سے پانی کے بھی شدیدقلت پیداہوتی جارہی ہے۔میرپورکے قصبے چکسواری کے تاجرحضرات،سماجی راہنما اورعام شہری سراپااحتجاج بنے ہوئے ہیں اورحکومت آزادکشمیرکے اربابِ اختیاراورواپڈاسے مطالبہ کرتے ہیں کہ متاثرین منگلاڈیم کے زخموں پرنمک پاشی بندکرتے ہوئے لوڈشیڈنگ کادورانیہ کم سے کم کیاجائے بصورتِ دیگراہلیانِ چکسواری اپنے حقوق کے لیے احتجاجی تحریک چلائیں گے جس کے نتائج کی تمام ترذمہ داری حکومت آزادکشمیراورواپڈاکے اربابِ اختیارپرعائدہوگی۔

اگلی خبر پڑہیں پچھلی خبر پڑہیں

ایک ماہ کی مقبول ترین