Jaag Kashmir News


Jaagkashmir.com urdu news dadyal mirpur azad kashmir

چناری(اعجاز احمد میر،خصوصی رپورٹر)

  شدید خشک سالی کے بعد بھارت نے سندھ طاس معائدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے آبی جارحیت شروع کر تے ہوئے مقبوضہ جموں و کشمیر میں دریائے جہلم کا پانی مزید روکنا شروع کر دیا دریائے جہلم کی سطح تقریبا پچاس سے ساٹھ فٹ کم ہو کر رہ گئی دریائے جہلم ندی نالے کی شکل اختیار کر گیادریا کے کنارے رہنے والی آبی مخلوق کی زندگیوں کو خطرات لاحق جبکہ دریائے جہلم کے پانی سے سیراب ہو نے والی فصلوںکی تباہی کے خطرات بڑھ گئے دریا کے کناروں پر رہنے والے لوگ شدید مشکلات کا شکار۔تفصیلات کے مطابق شدید خشک سالی کے بعد بھارت نے سندھ طاس معائدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دریائے جہلم کا پانی مقبوضہ کشمیر کے ضلع بارہ مولا میں روکنا شروع کر دیا جس وجہ سے دریائے جہلم ایک ندی نالے کی شکل اختیار کر تے ہوئے تاریخ کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا ہے یاد رہے کہ بھارت ہر سال موسم سرما میں دریائے جہلم کا پانی روکتا ہے رواں سال شدید خشک سالی کے بعد بھارت کی جانب سے سندھ طاس معائدے کی خلاف ورزی کے بعددریائے جہلم میں پانی کی شدید کمی واقعہ ہوئی ہے اگر آئندہ چند ہفتوں میں مقبوضہ و آزاد جموں و کشمیر میں بارشوں اور پہاڑوں پر بارشوں کا سلسلہ نہ شروع ہوا تو دریائے جہلم میں پانی کے مکمل ختم ہو نے کا خطرہ ہے جس سے آبی مخلوق کے جاں بحق ہونے فصلوں کے تباہ ہونے کے ساتھ ساتھ دریائے جہلم کے کنارے بسنے والوں کی مشکلات میں اضافہ ہونے کاخطرہ ہے دریا کے کنارے بسنے والے لوگوں کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی برادری بھارت کی جانب سے آبی جارحیت کا نوٹس لیتے ہوئے اس سندھ طاس معائدے کی خلاف ورزی سے روکے تانکہ لوگ مشکلات سے دوچار نہ ہوں دریں اثناء بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر سے آنے والے چھوٹے ندی نالوں کے پانی کو بھی روکنا شروع کر رکھا ہے بھارت کی جانب سے ندی نالوں کے پانی روکنے سے آزاد کشمیر میں چھوٹے نالوں پر بنے ہوئے پاور پراجیکٹ سے بجلی کی پیداوار میں تقریبا اسی فیصد کمی ہو گئی ہے جس سے مقامی آبادی کو چوبیس گھنٹے کے بجائے صرف چار سے پانچ گھنٹے بجلی کی سپلائی جاری ہے آزاد کشمیر میں مقامی پاور پراجیکٹ پر بجلی کی پیداوار میں بڑے پیمانے پر کمی کے باعث لوگ شدید مشکلات اور پریشانیوں کا شکار ہیں   

 


Next News Previous News
By Waqas Ch
23/12/2016 1428 views

Leave A Comment