Jaag Kashmir News


Jaagkashmir.com urdu news dadyal mirpur azad kashmir

صدر آزاد کشمیر کا انتخاب یا گورنر کا تقرر

تحریر: سردار عبدالرحمن خان نامہ نگار(جاگ کشمیر نیوز )

آزاد کشمیر میں نام نہاد جموریت کا آخری مرحلہ یعنی صدر ریاست کا انتخاب ہو چکا ہے۔ بظاہر یہ انتخابات شفا فیت کے اعتبار سے مثالی ہیں۔ مگر ان انتخابات کا آخری رائونڈ کئی سوالات اٹھا رہا ہے ۔اب تک ایکٹ 1974ء کی روشنی  میں ہونے والے تمام انتخابات میں سے مشرف دور میں حاضر سروس جرنیل کو فوری طورپرریٹائر کر کے صدر ریاست بنایا گیا اورآج کی مسلم لیگ اور اس وقت کی مسلم کانفرنس سے  تابع داری سے بلا چوں چراں تابع داری  میں 2006تا 2011    سیشن  کے لیے علاقائی صدر کے طور  پر قبول کر لیا آج کی مسلم لیگ دراصل اس وقت کی ہی مسلم کانفرنس کا ہی متبادل سیا سی ڈھانچہ ہے۔ فرق صرف وزیر اعظم کے نام کا ہے اس اسمبلی میں بھی آج کی مسلم لیگی ممبران اسمبلی کی اکثریت تھی اور اُس وقت سردار عتیق احمدخان بطور وزیر اعظم آئے اور آج اُس وقت کی کابینہ کے ممبر راجہ فاروق حیدر خان جو وزیر اعظم مقرر ہوئے آزا دکشمیر جو کہ ڈوگرہ عہد کے اڑھائی اضلا ع جن کا رقبہ چا ر ہزار مربع میل کے لگ بھگ ہے اور آبادی اب چا لیس لاکھ سے تجا وز کر گئی ہے اس کے مقا بلے میں پاکستا ن کا راولپنڈی ڈویژن رقبہ اور آبا دی کے لحا ظ سے بڑاہے اس قدر بھا ری انتظا میہ عوام  پر بو جھ ہے نو منتخب صدر یا اسلام آبا د سے بلڈوز شخصیت نامی گرامی سفارتکار ہیں مگر میری رائے میں وہ آزاد کشمیر جغرافیہ سے نا بلد ہیں۔ انہیں چالیس لاکھ لوگو ں میں سے صرف چا لیس کے نام یا د ہو ں گے جس آ دمی نے اپنی زندگی کے 40-45 سال ریا ست سے با ہر گزارے ہو ںاُس کی یہا ں کتنی واقفیت ہو سکتی ہے ؟انہیں تو سب جا نتے ہیں مگر وہ کتنو ں کو جا نتے ہیں اصل مسئلہ یہ ہے انہیں جو وقت دیا گیا ہے یہ کھیل کھیلنے کے لئے یعنی1825دن ان میں سے تو 700دن تو تعطیلا ت کے ہیںباقی 1100دنو ں میں وہ کیا سیاسی کردار ادا کر یں گے کہ لو گ انہیں یا د رکھ سکیں۔ 2006-2011کے لیء مقرر کئے گئے صدر جنرل محمد انور خا ن کو سیا ست سے فا رغ ہو ئے پا نچ سال ہو گئے بس اس عر صہ میں کوئی ایسی خبر نظر سے نہیں گزری کہ وہا ں سیا ست دان یا سیاست کا ر نے مو صو ف ملا قا ت کی ہو اور ریاست جمو ں و کشمیر کے چوراسی ہزار مربع میل علاقہ کے لئے کو ئی ویژن رکھتے ہیں۔

انہیں صرف سابق صدر کے طور پر تو لو گ جا نتے ہیںمگر وہ کتنے لوگو ں کو جا نتے ہیں وہی بتا سکتے ہیں اس میں کو ئی شک نہیں کہ مو جو دہ  نو منتخب صدر مسعود خا ن ایک سیاسی خا ندا ن سے تعلق رکھتے ہیں مگر خود سیا ست سے دور رہے۔ انھو ں  بطور سفیر پاکستان کی بقا اور پاکستا ن کے لئے گراںقدر خدما ت سر انجا م دی ہیں پاک چین تعلقا ت کو مزید تقویت دی اقوام متحدہ میںپاکستانی مندوب کے طور پر بھا رت پر مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں دباؤ بڑھا یا شا ید اس صلہ میں اُنہیں آزاد کشمیر کی صدارت پر مقرر کر کے ان کی حیثیت کو متنا زع بنا نے کے لے ان سے انتقا م لیا گیا ہے آزاد کشمیر کی صدارت کے مقابلہ میں اقوام متحدہ میںپاکستا نی مندوب ہو نا یا چین میں سفیر کی حیثیت سے خدما ت سر انجام دینا بڑا اعزاز ہے میں سمجھتا ہو ں کہ مسعود خا ن کو صدر ریا ست بنا کر کھڈ ے لائن لگایا گیا ہے آزاد کشمیر کا صدر یا وزیر اعظم مسئلہ کشمیر پر جب بھی بو لیں گے تو ان کی کوئی نہیں سُنے گا جبکہ عالمی فورم پر پاکستان کا سفیر جب بھی بو لے گا تو بھا رت کو تکلیف ہو گی بو لنے والے کا منہ بند کرنا ضروری تھا کہ وہ صدر ریا ست بنا دیا جائے دوسری جا نب نو مقرر /نو منتخب صدر کے لئے ووٹر فہر ست میں نام درج کر وانے کے لئے جو طریقہ کار اپنایا گیا ہے وہ بھی انتہا ئی مضیحکہ خیزہے مقررہ تا ریخ کے بعد کتنے لوگ اٹھا رہ سال کی عمر کو ہوئے اورکتنے نام درج نہ ہو نے کی وجہ سے انتخا با ت میں حصہ نہ لے سکے یہ بھی ایک سوالیہ نشا ن ہے اور پاکستان وفا قی حکو مت کی آزاد کشمیر میں کھلی سیاسی مداخلت سے بھا رت کے زیر تسلط حصہ میںدہلی سے گورنر مقرر کیا جاتا ہے اور یہا ں ایک حصہ گلگت  بلتستان میں گورنر جبکہ آزاد کشمیر میں صدر کا تقرر/ انتخا ب بھی اسلام آبا د کے راستے سے ہو رہا ہے ہم کسی کو کیا طعنہ دیںہم وہی بات کرتے ہیں جو بھارت کو پسند ہو یا دوسرے لفظوں میں بھارت کی پسند ہماری پسند ہے۔ آج مسلم لیگ کی حیثیت مشکوک ہو گئی ہے ۔ اس عہدہ پر کسی سیاسی شخصیت کا تقرر یا انتخاب ریاست کے اس پار اچھاتاثر جاتامگر ایسا نہ ہو سکا۔ ضرورت اس امر کی تھی کہ مسعود خان کو پاکستان کاو وزیر خارجہ بنایا جاتا اور انہیں پاکستان میں پہلا کشمیری ہونے کا اعزاز دیا جاتا اس سے آزاد کشمیر اور بھارت کے زیر قبضہ کشمیر میںاچھا تاثر جاتا اور یہاں کی عوام کا سر فخر سے بلند ہوتا ۔۔۔باقی سب خیریت۔

 


Next News Previous News
By Waqas Ch
25/08/2016 176 views

Leave A Comment